جی ٹی وی نیٹ ورک
بریکنگ نیوز

وفاقی کابینہ: مریم نواز کا نام ای سی ایل سے نکالنے کی درخواست مسترد

مریم نواز

اسلام آباد: وفاقی کابینہ نے مریم نواز کا نام ای سی ایل سے نکالنے کی درخواست متفقہ طور پر مسترد کردی اور کابینہ اجلاس میں ای سی ایل سے 8 نام نکالنے کی منظوری دے دی ہے۔

وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت وفاقی کابینہ کا اجلاس ہوا جس میں 21 نکاتی ایجنڈے پر غور کیا گیا۔

کابینہ اجلاس میں ای سی ایل میں نام ڈالنے اور نکالنے سے متعلق مختلف کیسز پیش کیے گئے جس میں ذیلی کی سفارشات پر مریم نواز کا نام ای سی ایل سے نکالنے کے فیصلے کو مسترد کر دیا گیا۔

ذرائع کے مطابق وفاقی کابینہ کا کہنا ہے کہ مریم نواز اگر کسی دوسرے فورم سے رجوع کرنا چاہیں تو کوئی اعتراض نہیں ہے۔ کابینہ نے 4 نام ای سی ایل میں ڈالنے اور 8 نام نکالنے کی منظوری دی۔

اجلاس میں ملک کی مجموعی سیاسی و معاشی صورتحال کا جائزہ بھی لیا گیا، دواؤں کی زیادہ سے زیادہ قیمت کے فروخت کے تعین کی منظوری دی گئی جبکہ اقتصادی رابطہ کمیٹی کے اجلاس کے فیصلوں کی بھی توثیق کی گئی۔

یہ بھی پڑھیں: مریم نواز کا نام ای سی ایل سے نکالنے کی درخواست پر سماعت چھبیس دسمبر تک ملتوی

وفاقی کابینہ نے ای سی سی کے 12 دسمبر 2019 کے فیصلے کی توثیق کی ‏ہے، کابینہ نے فیڈرل لینڈ کمیشن کے سینئر ممبر کی تقرری، نیشنل کمیشن فار ہیومین رائٹس کے چیئرپرسن اور ممبران، نیشنل پاور پارکس مینجمنٹ کمپنی کے بورڈ آف ڈائرکٹرز اور فرسٹ ویمن بینک کے صدر کی تقرری کی منظوری دے دی۔

ذرائع کے مطابق کابینہ اجلاس میں اسٹیٹ بینک کے شیئرز ہاؤس بلڈنگ فنانس کارپورشین کو بیچنے کی منظوری بھی دی گئی ہے۔

اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ ‏ایل او سی پر13 ہزار 982 گھرانوں ‏کو پیکج کے تحت امداد دی جائےگی، پیکج کے تحت 67 کروڑ روپے لاگت سے متاثرہ گھروں کو امداد ‏ملے گی۔

کابینہ نے اسلام آباد میں صفائی کی ناقص صورتحال پر اظہار ناپسندیدگی کیا، وفاقی کابینہ ‏نے ٹیکس قوانین میں اصلاحات کی منظوری دی۔

متعلقہ خبریں