جی ٹی وی نیٹ ورک
بریکنگ نیوز

سندھ بجٹ کا حجم 14 کھرب 77 ارب روپے ہے، اس بجٹ میں ہم کوئی ٹیکس نہیں لگا رہے

بجٹ میں ہم

کراچی: وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ کا کہنا ہے کہ اس بجٹ میں ہم کوئی ٹیکس نہیں لگا رہے ہیں، سندھ بجٹ کا حجم 14 کھرب 77 ارب روپے ہے۔

اسپیکر آغا سراج درانی کی زیر صدارت سندھ اسمبلی میں بجٹ اجلاس ہوا، اجلاس میں وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ بطور وزیرخزانہ بجٹ پیش کر رہے تھے۔

وزیراعلیٰ مراد علی شاہ کی تقریر کے دوران سندھ اسمبلی میں کافی شور شرابا کیا گیا، اپوزیشن ارکان کی جانب سے ایوان میں سیٹیاں بجائی گئیں۔

مراد علی شاہ کا اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہنا تھا کہ سندھ بجٹ کا حجم 14 کھرب 77 ارب روپے ہے، صوبائی بجٹ میں 19.1 فیصد اضافہ کیا گیا ہے، زراعت کی بحالی کے لیے 3 ارب روپے مختص کیے گئے ہیں۔

وزیراعلیٰ سندھ کا کہنا تھا کہ شہریوں کی فلاح و بہبود کیلئے 16 ارب روپے رکھے گئے ہیں، تعلیم کے شعبے کے لیے 3.20 ارب روپے رکھے گئے ہیں، سرکاری ملازمین کی تنخواہوں میں 20 فیصد اضافہ کیا گیا ہے۔

یہ بھی پڑھیں: یونس میمن کون ہے اور اتنا اہم کیوں ہے؟

ان کا کہنا تھا کہ کم لاگت کی ہاؤسنگ کے لیے 2 ارب روپے مختص کیے گئے ہیں، لائیو اسٹاک اینڈ فشریز کی معاونت کے لیے ایک ارب روپے رکھے گئے ہیں، زراعت سے وابستہ خواتین کے لیے 500 ملین روپے رکھے گئے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ اسپیشل چلڈرن فنڈ کے لیے 500 ملین روپے مختص کیے گئے ہیں، مزدور کی کم از کم اجرت 17500 سے بڑھا کر 25ہزار روپے کردی گئی ہے۔

وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ کا کہنا تھا کہ آئی ٹی شعبے کے لیے 1.70 ارب روپے مختص کیے ہیں، انسداد وبائی امراض کیلئے 24.73 ارب روپے مختص کیے گئے ہیں۔

مرادعلی شاہ کا کہنا تھا کہ ایس آئی یو ٹی کو دی جانے والی گرانٹ میں 27 فیصد اضافہ کیا گیا ہے، صحت کیلئے بجٹ میں 18.50 ارب روپے رکھے گئے ہیں، امن و امان کیلئے 119.97 ارب روپے مختص کیے گئے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ بلدیاتی بجٹ میں 31.3 فیصد اضافہ کرکے 10.48 ارب روپے مختص کیے ہیں، ورکس اینڈ سروسز کیلئے 30 ارب روپے رکھے گئے ہیں، رواں مالی سال میں کورونا وبا سے نبرد آزما ہونے کے لیے اقدامات اٹھائے گئے۔

انہوں نے کہا کہ کورونا سے نمٹنے کے لیے محکمہ صحت کے ملازمین کو ہیلتھ رسک الاؤنس دیا گیا، ہیلتھ رسک الاؤنس کی مد میں 17.03 بلین فراہم کیے گئے۔

وزیراعلیٰ سندھ کا کہن تھا کہ مختلف اسپتالوں میں منظور شد ہ اسامیوں پر کام کر رہے ہیں، ہنگامی بنیادوں پر پیرامیڈکس کو 89 یوم کے لیے تعینات کیا گیا، تقرری عالمی وبا سے نجات حاصل کرنے کےلیے کی گئی 2.44بلین خرچ ہوئے، کورونا سے متعلق آپریشنل اخراجات کی مد میں محکمہ صحت کو 7.781بلین فراہم کیے۔

اسپیکر سندھ اسمبلی آغا سراج درانی نے بجٹ اجلاس کل دوپہر 2 بجے تک ملتوی کردیا۔

متعلقہ خبریں