جی ٹی وی نیٹ ورک
اہم خبر

امریکا بدلنے لگا، مسلمانوں پر سفری پابندیاں ختم، پندرہ حکم نامے جاری

امریکا بدلنے

واشنگٹن : امریکا کے نئے صدر جو بائیڈن کے حلف اٹھانے کے ساتھ یہ دنیا کا اہم ترن ملک بدلنے لگا۔ نو منتخب صدر نے عہدہ سنبھلتے ہی پندرہ احکامات جاری کئے۔ جن میں سب سے اہم فیصلہ کچھ مسلم اور افریقی ممالک پر سابق صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی عائد کردہ سفری پابندیاں کا خاتمہ ہے۔

دفتر پہنچتے ساتھ ہی انہوں نے سب سے پہلے حکم ناموں پر دستخط کیے، جس نے ڈونلڈ ٹرمپ کے عالمی وباء کے ردِ عمل پر جھاڑو پھیر دی اور ماحولیاتی ایجنڈے اور پناہ گزین مخالف پالیسیز کو پلٹ دیا۔ انہوں نے امریکی معیشت کو ترقی دینے اور ملک میں نسلی اور مذہبی تنوع کے فروغ کے اقدامات بھی اٹھائے۔

دوپہر میں اوول آفس سے جو بائیڈن نے پندرہ حکم ناموں، یادداشتوں اور اعلانات پر دستط کیئے، جس میں پیرس ماحولیاتی معاہدے میں دوبارہ شمولیت اور مسلمانوں پر لگائی پابندیوں کا خاتمہ تھا۔

اوول آفس میں بدھ کی سہ پہر مختلف اقدامات پر دستخط کرتے ہوئے جو بائیڈن نے کہا کہ حکم نامے اور ہدایات جاری کرنے کے لیے وقت ضائع نہیں کرسکتے۔ جو بائیڈن نے اپنے ابتدائی حکم نامے میں عالمی ادارہ صحت میں واپس جانے کا اعلان بھی کیا ہے۔

یہ بھی پڑھیں : دہائیوں بعد پہلا صدر ہوں جو کوئی جنگ چھوڑ کر نہیں جارہا : ڈونلڈ ٹرمپ

امیگریشن سے متعلق احکامات میں جو بائیڈن نے سرحد پر دیوار کی تعمیر میں مدد دینے والے ڈونلڈ ٹرمپ کے اعلامیے کو واپس لے لیا اور مسلمان اکثریت والے ایران، لیبیا، صومالیہ، شام، یمن، وینزویلا اور شمالی کوریا پر لگائی گئی سفری پابندیاں ختم کردیں۔

امریکا کے صدر جو بائیڈن نے دنیا میں اپنے اتحادیوں اور ملک کے اندر مختلف طبقات کے مابین پیدا ہونے والی دوریوں کو ختم کرنے کے لیے کوششوں کا اعلان کیا۔ سعودی عرب اور یمن کے درمیان اختلافات کے خاتمہ پر بھی رضامندی ظاہر کی۔

جو بائیڈن نے کہا کہ ہم ایک بار پھر امریکا کو دنیا میں اچھائی کی سب سے بڑی طاقت بنائیں گے۔ اختلافات کے باوجود ہم ایک دوسرے کے ساتھ عزت و احترام سے پیش آسکتے ہیں۔ یہ اقدامات انتخابات کے دوران وعدوں کی تکمیل کا نقطہ آغاز ہے۔

متعلقہ خبریں