جی ٹی وی نیٹ ورک
اہم خبریں

معیشت دباؤ کے ساتھ 3.5 فیصد رہنے کی پیش گوئی، روپے کی بے قدری مہنگائی کا سبب قرار

معیشت دباؤ

اسلام آباد : پاکستان کی معیشت گراوٹ کا شکار ہے، مہنگائی ڈبل ڈیجٹ میں رہنے کا امکان ہے، معیشت مزید دباؤ کا شکار رہے گی۔

ایشیائی ترقیاتی بینک نے پاکستانی معیشت سے متعلق نئی رپورٹ جاری کر دی ہے، جس میں آئندہ سال مالیاتی ایڈجسٹمنٹ کے تحت معیشت مزید دباؤ کا شکار ہونے کا خدشہ ظاہر کیا گیا اور مالی سال 2023 معیشت سست روی کے ساتھ 3.5 فیصد رہنے کی پیش گوئی کی گئی ہے۔

یہ بھی پڑھیں : مہنگائی کا طوفان برپا ہونے والا ہے، ملک کی معشیت کو تباہ کردیا گیا : حلیم عادل شیخ

رپورٹ کے مطابق روپے کی مسلسل گراوٹ سے درآمدی بل میں مزید اضافے کا امکان ہے۔ صنعتوں کی پیداوار میں کمی متوقع ہے۔ رواں مالی سال اپریل تا جون پاکستان میں مہنگائی میں تیزی سے اضافہ ہوا۔ 2023 میں پاکستان میں مہنگائی کی اوسط شرح 18 فیصد تک رہنے کا امکان ہے۔

رپورٹ میں بتایا گیا کہ پیٹرولیم مصنوعات اور بجلی کی سبسڈی کے خاتمے، روپے کی قدر میں نمایاں کمی اور بین الاقوامی اجناس کی قیمتوں میں اضافے سے مہنگائی میں اضافہ ہوا۔

اے ڈی بی کے مطابق جون 2022 میں پاکستان میں مہنگائی کی شر 21.3 فیصد پر پہنچی، جو 2008 کے بعد سب سے زیادہ رہی۔ مالی سال 2022 میں اوسط مہنگائی 12.2 فیصد تک پہنچ گئی۔

متعلقہ خبریں